Wednesday, 30 November 2016



MOHAMMAD YASIR ALVI
A symbol of exemplary teaching profession
Never forget in his disciple's heart

****************

موت العالم، موت العالم
 آہ ۔۔۔۔۔۔ ہائر سیکندری سکول بیروٹ کے سابق پرنسپل
 محمد یاسر علوی
****************                              
تحریر: محمد عبیداللہ علوی                                 
****************                       
ہائر سیکندری سکول بیروٹ کے سابق پرنسپل محمد یاسر علوی 25 اکتوبربروز جمعہ صبح صادق کے وقت کمپلکس ہسپتال اسلام آباد میں داعی اجل کو لبیک کہہ گئے ..... ان کی عمر61 سال تھی، ان کی نماز جنازہ بعد نماز جمعہ ٹنگان کہو شرقی میں ادا کی گئی ۔۔۔۔ مرحوم اسی سکول کے موجودہ وائس پرنسپل فہیم احمد علوی کے بڑے بھائی اور صحافی محمد عبیداللہ علوی کے فرسٹ کزن تھے۔ ۔۔۔۔ گزشتہ 25 روز کے دوران ۔۔۔۔ بیروٹ کے علوی آعوان نیک محمد آل فیملی میں یہ دوسرا سانحہ ارتحال ہے جبکہ انہی پچیس دنوں میں اسی فیملی استاد الاستاذ مولانا محمد اسماعیل علوی کے سب سے چھوٹے داماد صفدر بھی بٹناڑہ، مری میں اللہ کو پیارے ہو گئے ہیں۔
موت تو ہر ایک کو آنی ہے جو اس دنیا میں آیا ہے مگر ایسے لوگ بہت کم ہو تے ہیں جو اپنے پیچھے کوئی صدقہ جاریہ چھوڑ جاتے ہیں ۔۔۔۔ محمد یاسر ان سینئر اساتذہ میں تھے جو اپنے فرسٹ کزن ۔۔۔۔ سمیع اللہ علوی ۔۔۔ کی طرح نفس مطمئنہ لیکر پیدا ہوئے تھے، زندگی بھر یہ دونوں نفوس خلوت نشین رہے، دونوں انتہائی ذہین تھے اور وقف فی التدریس بھی رہے ۔۔۔۔ دونوں قناعت پسند بھی، طلبا سے لالچ سے کوسوں دور رہے ۔۔۔۔ آج ان دونوں کے ہزار ہا شاگرد ملک میں اپنا تعمیری حصہ ڈال رہے ہیں اور اس کا ثواب ان دونوں ۔۔۔۔ اللہ کے پاک باز ۔۔۔۔ بندوں کو پہنچ رہا ہے۔
اول و آخر صرف استاد بن کر نہایت دیانتداری سے علم اپنے شاگردوں کو ڈیلیور کرنے والے ان دونوں ۔۔۔۔ کو سسرال بھی بے حد نفیس اور مروت والے ملے ۔۔۔۔ یاسر صاحب کے خسر تھلہ باسیاں والے مولانا حفیظ قریشی (حال مقیم راولپنڈی) جبکہ سمیع اللہ کے بکوٹ والے قاضی الماس مرحوم تھے ۔۔۔۔۔ یاسر صاحب کو ان کی اہلیہ 1995 میں دار مفارقت دے گئی اور انہوں نے اپنے بچوں کو ۔۔۔ ماتریئی (سوتیلی ماں) سے بچانے کیلئے اگلے دو عشروں تک شادی بھی نہیں کی، بڑا بیٹا وسام الحسن علوی بی ایس میتھ کر رہا ہے، چھوٹا حسام الحسن نے ایف ایس سی کی ہے، سمیع اللہ علوی خود شادی کے انیس برس بعد اپنے تین بچوں کو یتیم اور سہاگن کو بیوہ کر کے وہاں چلا گیا، جہاں سے قیامت تک کوئی واپس نہیں آتا ۔۔۔۔ دونوں نفوس مطمئنہ کا رابطہ اس فانی دنیا سے منقطع ہو چکا ہے، اب انہیں ہماری دعائوں کی ضرورت ہے ۔۔۔۔ سمیع اللہ کا بڑا بیٹا ذکریا علوی آئی سی ایس ، دوسرا مْقتصد علوی میٹرک اور سب سے چھوٹا ابطخی علوی جماعت ہشتم کا طالب علم ہے ۔۔۔۔ اور اب یہ تینوں وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں تعلیم حاصل کر رہے ہیں ۔۔۔۔ اللہ تبارک و تعالیٰ یاسرصاحب اور سمیع اللہ کے بچوں کو اپنی حفظ و امان میں رکھے اور انہیں اپنی اعلیٰ تعلیم کے حصول میں کامیاب فرماوے ۔۔۔۔ آمین یا رب العالمین۔
 
 *******************
یاسر صاحب کو ان کے بڑے صاحبزادے وسام الحسن علوی کا خراج عقیدت
My Father
My Mother
My Teacher
My Life
May ALLAH bless him.....
ALLAH Pak Abu G ko Jannat-Ul-Firdoos atta kry aur hamain un k liey Sadqa-E-Jariaa bna Dy...
----------
Choor Janii Ha Aik Din Sub Ny Dunyaan
Mery ALLAH karm farmana Un py
Atta Krna Jannat aur Banana bagh-e-jannat
Qabar ko Roshan b Krna Ab-E-Qusaar b pilana
Meri Sari Nakiyaan aur Naik Amaal Un k Hissy Likh dena
Meri Namaz-o-Rozy ka sawab Un k Hissy Likh Dena
Men parhon jab b Quran Drood-O-Tasbeeh Sub Tamam
Sub Ka Jitnaa Ho Sawab Un K Hissy Likh Dena
Aur Qayamat K Din Shafat-E-Noor-E-Mobeen Un K Hissy Likh Dena
Mery ALLAH mery Abu Ka Name Jannat-Ul-Firdoos K Shenshahoon men Likh dena....
Teri Duaa Arsh-E-Muallaa ko Hilla Dy gi Wisaam
Apny Abu K Liey ilm-E-Rayaazyaat Men aik Baab Likh dena
**********************
آمین یا رب العالٰمین

No comments:

Post a Comment